آپریشن ضرب عضب کے ساتھ ضرب قلم کی بھی ضرورت ہے، وزیراعظم

آپریشن ضرب عضب کے ساتھ ضرب قلم کی بھی ضرورت ہے، وزیراعظموزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ دہشتگردی نےپاکستان کو مشکلات سے دوچار کیا، اب آپریشن ضرب عضب کے ساتھ ضرب قلم کی بھی ضرورت ہے۔اسلام آباد میں ادبی کانفرنس سے خطاب میں وزیراعظم نوازشریف کا کہنا تھا کہ دنیا کے بڑے کارناموں کے پیچھے علم اور اہل علم کا نام ہے۔اگر شعر و ادب کے چشمے خشک ہوجائیں تو فتنے جنم لیتے ہیں امن کے فروغ کے لئے اہل علم و دانش کا کلیدی کردار ہے، دہشت گردی نے وطن عزیز کو مشکلات سے دوچار کیا جس کے سدباب کے لئے آپریشن ضرب عضب شروع کیا گیا لیکن اب پاکستان کو امن و سکون کا گہوارہ بنانے کے لئے ضرب عضب کے ساتھ ضرب قلم کی ضرورت ہے۔وزیراعظم کاکہنا تھا کہ پاکستان کی خدمت کرنے والے محروم فنکاروں تک ہمیں خود پہنچنا ہوگا اوران کی مدد کرنا ہوگی فنکاروں کی بہبود کے لئے پہلے بھی بہت سے اعلانات کرچکا ہوں اور قومی تاریخ و ادبی ورثے کے لئے مزید 50 کروڑ روپے دینے کو تیار ہوں فنکاروں کی فلاح وبہبود کے لئے کمیٹی ایک ماہ میں رپورٹ پیش کرے۔میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شاعرو ادیب ملک و قوم کی رہنمائی اور سنہرے مستقبل کی تلاش کیلئے ملک و قوم کی ضرورت ہیں ،حکومت شعبہ ادب کے فروغ کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے گی۔
Advertisements